سوجن کی ان 8 وجوہات کو کبھی نظر انداز نہ کریں


e

کیا آپ کے پیروں میں بھی سوجن رہتی ہے؟ کیا آپ نے کبھی یہ نوٹ کیا ہے کہ جو جوتے اور چپلیں وغیرہ آپ پہلے باآسانی پہن لیتے تھے اب انہیں پہننے میں پریشانی محسوس ہوتی ہے؟ یہ ایسی ہی نہیں ہوتا بلکہ اس کی وجہ پیروں میں سوجن ہے اور سوجن ٹشوز میں موجود سیال کے بڑھنے کی وجہ سے ہوتی ہے۔ آج ہم آپ

کو بتانے جارہے ہیں کہ سوجن کیوں ہوتی ہے اور اس کی کن علامات کو قطعاً نظرانداز نہیں کرنا چاہیئے۔نمک کے استعمال میں زیادتی:ایک نارمل انسان کے لئے دن میں نمک کے استعمال کی حد اوسطاً 5 گرام یا 0.17 اونز مقرر ہے اگر ہم اس کا استعمال اپنی غذا کے ساتھ کچھ زیادہ کریں گے تو یہ سوجن کا باعث بنتا ہے اور آپ کے جسم کا اہم ٹشو میں سیال بڑھ جاتا ہے۔الرجی کے سبب:اگر کھجلی اور لال پن کی وجہ سے سوجن ہورہی ہے تو یہ الرجی ہے۔ اس کے لئے آپ کو فوراً طبی علاج کی ضرورت ہے۔ہارمونز:ہارمونل ناکامی جسم میں سیال جمع کرنے کی ایک اور وجہ ہے۔ اگر آپ کے پیٹ میں

کشیدگی، ٹانگوں کی سوجی، یا کچھ وزن میں اضافہ ہو رہا ہو تو یہ زیادہ تر ہرمون اڈیما کا امکان ہے۔ اس سے بچنے کے لئے اپنی ڈائٹ میں تبدیلی لائیں، زیادہ پروٹین والی غذائیں کھائیں اور میٹھی، مصالحے دار اور نمکیات سے بھرپور چیزیں کھانے سے اجتناب کریں۔گردے کی بیماریاں:چہرے پر سوجن خاص طور پر صبح کے وقت آپ کے گردوں میں کسی خرابی کی نشاندہی کرتی ہے اس کے علاوہ گردوں کی بیماری میں کمر کے نچلے حصے میں درد اور پیشاب کے رنگ میں تبدیلی آجاتی ہے۔ اس سے نجات حاصل کرنے کے لئے ایک ڈائٹ پلان بنائیں اور پیٹ کے بل سونے کی بجائے کمر کے بل سوئیں کیونکہ پیٹ کے بل سونے سے بھی چہرے پر سوجن آتی ہے۔دل کی بیماریاں:ٹانگوں پر سوجن اور پیٹ کا بڑھنا دل کی بیماریوں کی طرف اشارہ کرتا ہے۔ اس کی وجہ سے اکثر سینے میں درد اور تھکاوٹ رہتی ہے۔ اس کا علاج گھر پر کرنے کے بجائے ماہرِ قلب سے کروانا ہی مناسب ہے۔مختلف ادویات کا استعمال:مختلف ادویات کا استعمال بھی سوجن کا باعث بنتا ہے مثال کے طور

پر اینٹی پائیریٹک، اینلگیسک یا پیدائش کنٹرول کی گولیاں اس کی وجہ بنتی ہیں۔ اگر آپ کو ادایات سے سوجن ہوتی ہے تو فوراً اپنے معالج سے رابطہ کریں شاید وہ آپ کو اس کی نعم البدل گولیاں تجویز کرے جو سوجن کا باعث نہ بنیں۔لائف اسٹائل:ایسے افراد جن کے دن کا زیادہ تر وقت کھڑے ہوکر یا صرف بیٹھ کر گزرتا ہے ان کی ٹانگیں بھی ایڈیما کا شکار ہوجاتی ہیں۔ اسی لئے اگر آپ کا کام زیادہ تر کھڑے رہنے کا ہے تو تھوڑی تھوڑی دیر میں کچھ وقت کیلئے بیٹھیں اور اگر صرف بیٹھنے کا ہے تو تھوڑی تھوڑی دیر بعد بریک لے کر کھڑے ہوں اور ٹانگوں کو وارم اپ کریں۔ڈی ہائیڈریشن:ڈی ہائیڈریں کے ابتدائی مراحل میں آپ کی باڈی پانی کو بعد کے لئے جمع کرنا شروع کردیتی ہے جس کی وجہ سے آپ کے ٹخنوں، کلائیوں اور پیٹ کے نچلے حصے میں سوجن نمایاں ہونے لگتی ہے۔ اس سے بچاؤ کے لئے پانی کا زیادہ سے زیادہ استعمال کریں اور کافی، کولڈرنک اور الکحل سے اجتناب کریں۔تاہم سوجن ہمیشہ کسی بیماری کا باعث نہیں ہوتی بلکہ یہ صحت مند افراد کو بھی ہوسکتی ہے۔ اور اس کی وجہ بہت زیادہ گرم موسم، غیر آرام دہ جوتے اور بہت زیادہ مقدار میں لکوئیڈ اشیاء کا استعمال بھی ہوسکتی ہے۔