پاکستان کے مایہ ناز بلے باز عمران نذیر تو آپ کو یاد ہوں گے آج کل وہ کہاں اور کس حال میں ہیں؟. گورے سینئر نے مجھے کہا جب بھی واپس آنا ہو صرف ایک کال کر دینا – اسد عمر. عمران خان کے خلاف توہین عدالت کی باضابطہ کارروائی شروع کرنے کا فیصلہ. زرداری اور نواز شریف مل کر کیا کرنے جارہے ہیں؟ سینئر صحافی نے خطرے کی گھنٹی بجا دی. نئی دہلی، بیجنگ سرحدی کشیدگی ، بھارت کی تینوں مسلح افواج کے کمانڈروں کا فوجیوں کو چوکنا رہنے کا حکم. آج کی سب سے بڑی خبر : عدالت نے شریف برادران ، چوہدری برادران ، عمران خان، ایاز صادق ، شیخ رشید سمیت 64 سیاستدانوں کو بڑا حکم جاری کردیا. پی پی 4 گوجرخان : سپریم کورٹ نے (ن) لیگ کی بہت بڑی وکٹ اڑا دی. ن لیگ کے ڈیرے پر پی ٹی آئی ورکرز کی دھلائی ، ایسی خبر آگئی کہ آپ کا یقین کرنا مشکل ہو جائے گا. الیکشن ٹربیونل نے کلثوم نواز کے کاغذات نامزدگی کی منظوری کیخلاف پیپلز پارٹی کی درخواست سماعت کیلئے منظور کرلی. عوام کیلئے خوشخبری عید الاضحی پر 16روز کی تعطیلات کا اعلان ‎

’’ادھر آو پیچھے کہاں چھپ رہے ہو، کدھر ہیں دو لاکھ بندے‘‘نواز شریف راولپنـڈی میں ناکام پاور شو پر پھٹ پڑے


hanif-abbasiاسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)وہاں تو 20ہزار بھی نہیں تھے،کدھر ہیں دو لاکھ بندے؟تمہاری شکل بھی نہیں دیکھنا چاہتا، نواز شریف نے حنیف عباسی کو جھاڑ پلا دی۔ نجی ٹی وی 92نیوز کی ایک رپورٹ کے مطابق راولپنڈی میں ن لیگ کی ریلی کے دوران پاور شو ناکام ہونے پر نواز شریف حنیف عباسی پر سخت برہم ہو گئے اور جھاڑ پلاتے ہوئے نظروں کے سامنے سے ہٹ جانے کا کہہ دیا۔راولپنڈی میں اپنے خطاب کے بعد سابق وزیر اعظم پنجاب ہائوس میں رات قیام کرنے پہنچے تو وہاں دیگر قائدین کے ہمراہ حنیف عباسی بھی موجود تھے ، ذرائع کے مطابق
حنیف عباسی نواز شریف کے سامنے آنے سے کترا رہے تھے جبکہ نواز شریف کی ان پر نظر پڑ ہی گئی۔ قائدین کے درمیان نواز شریف نے حنیف عباسی کو جھاڑ پلاتے ہوئے کہا کہ وہاں تو 20ہزار بندے بھی نہیں تھے ، کدھر ہیں دو لاکھ بندے؟آئندہ مجھے اپنی شکل بھی نہ دکھانا۔قائد کی جانب سے سخت سست کہے جانے پر حنیف عباسی نے بہانہ تراشتے ہوئے کہا کہ کنٹینر میں شاید آپ کو صحیح سے نظر نہیں آئے۔ نجی ٹی وی 92نیوز کی رپورٹ کے مطابق ن لیگ کے ایک ایم پی اے کا اس موقع پر کہنا تھا کہ اگر اتنی بےعزتی میری ہوئی ہوتی تو میں پارٹی چھوڑ دیتا۔واضح رہے کہ اس سے قبل میڈیا پر آنیوالی خبروں کے مطابق جب نواز شریف پنجاب ہائوس سے جی ٹی روڈ ریلی کیلئے نکلے تو ریلی میں شرکا کی تعداد انتہائی کم تھی جو کہ راولپنڈی پہنچنے پر کچھ بہتر ہوئی تاہم نواز شریف جس طرح کی امید لگاکر پنجاب ہائوس سے چلے تھے ان کے وہ خواب اس وقت چکنا چور ہو گئے جب راولپنڈی میں بھی ن لیگ کا پاور شو فلاپ ہوا۔ سیاسی حلقوں کا کہنا تھا کہ نواز شریف کی رات گئے تقریر بھی اسی وجہ سے ہوئی کہ قائد ن لیگ چاہتے تھے کہ جب ریلی میں شرکا کی تعداد ایک اندازے کے مطابق زیادہ ہو جائے تو تب وہ خطاب کریں ۔