پاکستان کے مایہ ناز بلے باز عمران نذیر تو آپ کو یاد ہوں گے آج کل وہ کہاں اور کس حال میں ہیں؟. گورے سینئر نے مجھے کہا جب بھی واپس آنا ہو صرف ایک کال کر دینا – اسد عمر. عمران خان کے خلاف توہین عدالت کی باضابطہ کارروائی شروع کرنے کا فیصلہ. زرداری اور نواز شریف مل کر کیا کرنے جارہے ہیں؟ سینئر صحافی نے خطرے کی گھنٹی بجا دی. نئی دہلی، بیجنگ سرحدی کشیدگی ، بھارت کی تینوں مسلح افواج کے کمانڈروں کا فوجیوں کو چوکنا رہنے کا حکم. آج کی سب سے بڑی خبر : عدالت نے شریف برادران ، چوہدری برادران ، عمران خان، ایاز صادق ، شیخ رشید سمیت 64 سیاستدانوں کو بڑا حکم جاری کردیا. پی پی 4 گوجرخان : سپریم کورٹ نے (ن) لیگ کی بہت بڑی وکٹ اڑا دی. ن لیگ کے ڈیرے پر پی ٹی آئی ورکرز کی دھلائی ، ایسی خبر آگئی کہ آپ کا یقین کرنا مشکل ہو جائے گا. الیکشن ٹربیونل نے کلثوم نواز کے کاغذات نامزدگی کی منظوری کیخلاف پیپلز پارٹی کی درخواست سماعت کیلئے منظور کرلی. عوام کیلئے خوشخبری عید الاضحی پر 16روز کی تعطیلات کا اعلان ‎

بلیو ٹوتھ کو اس کا عجیب نام کیسے ملا؟


1499263950dailyausaf
بلوٹوتھ ایک وائرلیس ٹیکنالوجی سٹینڈرڈ ہےجسے ٹیلی کام کمپنی ایریکسن نے 1994 میں بنایا تھا۔اس میں فکس اور موبائل ڈیوائسزکے درمیان پرسنل ایریا نیٹ ورکس بنا کر کم فاصلے میں شارٹ ویو لینتھ، یو ایچ ایف ریڈیو ویو کو استعمال کرتے ہوئے ڈیٹا کا تبادلہ کیا جاتا ہے۔اس ٹیکنالوجی کو RS-232 ڈیٹا کیبلز کےوائرلیس متبادل کے طور پر متعارف کرایا گیا تھا۔موبائل فون کے کمپیوٹر سے کمیونی کیشن کا سسٹم بنانے والے انٹیل انجینئیرجم کارداچ نے 1997میں اس ٹیکنالوجی کیلئے بلوٹوتھ کا نام تجویزکیا۔جم فرانس جی بینگٹسون کی کتاب دی لانگ شپس کا مطالعہ کر رہے تھے۔دی لانگ شپس شاہ ہیرالڈ بلوٹوتھ اور وائی کنگز کے بارے میں ایک تاریخی کہانی ہے

جس میں شاہ بھی وہی کرتا ہے جو بلوٹوتھ ٹیکنالوجی کرتی ہے۔کتاب کے مطابق ہیرالڈ بلوٹوتھ نے ڈنمارک کے بکھرے ہوئے قبائل کو ایک سلطنت میں جوڑ دیا تھا۔ بلوٹوتھ ٹیکنالوجی بھی کمیونی کیشن پروٹوکولز کو ایک یونیورسل سٹینڈر میں یکجا کرتی ہے۔بلوٹوتھ کا لوگو بھی نورڈک رونی (حروف) کو ملا کر بنایا گیا ہے۔ یہ ہیرالڈ کے نام کے ابتدائی الفاظ ہیں۔بلوٹوتھ ایک وائرلیس ٹیکنالوجی سٹینڈرڈ ہےجسے ٹیلی کام کمپنی ایریکسن نے 1994 میں بنایا تھا۔اس میں فکس اور موبائل ڈیوائسزکے درمیان پرسنل ایریا نیٹ ورکس بنا کر کم فاصلے میں شارٹ ویو لینتھ، یو ایچ ایف ریڈیو ویو کو استعمال کرتے ہوئے ڈیٹا کا تبادلہ کیا جاتا ہے۔اس ٹیکنالوجی کو RS-232 ڈیٹا کیبلز کے وائرلیس متبادل کے طور پر متعارف کرایا گیا تھا۔