2بارآسکر ایوارڈ یافتہ بھارت کے انتہائی معروف موسیقار اے آر رحمان پہلے ہندو تھے ۔۔ انہوں نے اسلام کیوں قبول کیا ؟ اسلام قبول کرنے کے بعد ان


1499619009dailyausaf
ممبئی(مانیٹرنگ ڈیسک) آسکر ایواڈ یافتہ بھارتی موسیقار اے آر رحمان نے کہا ہے کہ اسلام کا مطلب سادہ طریقے سے زندگی جینا اور انسانیت کا احترام کرنا ہے، میری کامیابی کیوجہ صوفی تعلیمات پر عمل پیرا ہونا ہے۔ تفصیلات کے مطابق موسیقی کی دنیا میں اپنے 25 سال مکمل کرنے پر اے آر رحمان نے غیر ملکی خبررساں ادارے کو انٹرویو دیتے ہوئے اپنی کامیابی کی وجہ اسلام کو قرار دیا اور کہا کہ اسلام ایک سمندر ہے اور اس میں 70 سے زیادہ فرقے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اسلام محبت اور انسانیت کا احترام کرنا سیکھاتا ہے، میں اور میرا خاندان صوفی تعلیمات پر عمل کرتا ہوں کیونکہ یہ محبت کی پیامبر ہیں، آج سیاسی بنیادوں پر اسلام کا نام لے کر بہت سارے کام اپنی مرضی سے کیے جارہے ہیں۔

اے آر رحمان نے کہا کہ موسیقی مذاہب کے درمیان محبت پھیلانے میں کافی مددگار ثابت ہوتی ہے کیونکہ مختلف مذاہب کے لوگ ہمارے ساتھ مل کر اسٹیج پر ایک ساتھ پرفارم کرتے ہیں جس کی وجہ سے ہمیں ایک دوسرے کو سمجھنے میں مدد ملتی ہے۔یاد رہے بھارت کے ہندو گھرانے میں پیدا ہونے والے اللہ رکھا رحمان نے 23 برس کی عمر سن 1989 میں اسلام قبول کیا اور صوفی ازم کی تعلیمات سے متاثر ہوکر مستقل طور پر اُسے ہی اختیار کیا بعد ازاں انہوں نے اپنے اہل خانہ کو بھی ان تعلیمات سے روشناس کروایا جس کے بعد پورا گھرانہ مسلمان ہوا۔موسیقی کی دنیا میں صلاحیتیں بروئے کار لانے پر اے آر رحمان کو 2 آسکر، 2 گلوب اور گولڈن ایوارڈز سے نوازا گیا۔ بھارتی موسیقار اب تک متعدد بھارتی فلموں میں کامیاب ترین موسیقی ترتیب دے چکے ہیں۔