مسلمان ہونے پر نوازلدین ‘رام لیلا’ سے بے دخل

32 Views

(ویب ڈیسک) بھارت میں ہندو انتہا پسندوں نے پاکستان مخالفت کے بعد اپنے ملک میں مقیم مسلمان اداکاروں پر بھی پابندیاں عائد کرنا شروع کر دی ہیں اور مشہور بالی وڈ اداکار نواز الدین صدیقی کو مسلمان ہونے کی وجہ سے ‘رام لیلا’ سے نکال دیا گیا ہے۔

انتہا پسند جماعت شیو سینا کے چند ارکان نے کہا کہ وہ تھیٹر ڈرامے ‘رام لیلا’ میں کسی مسلمان اداکار کی شرکت کے مخالف ہیں۔

نواز الدین صدیقین نے کہا تھا کہ ‘رام لیلا’ میں اداکاری کرنا ان کا بچپن کا خواب تھا۔

ہندوستان میں دیوالی کے موقع پر بھارت بھر میں ‘رام لیلا’ اسٹیج ڈرامے کی تیاری کی جاتی ہے جس میں ام کی دس سر والے راون پر فتح کو ڈرامائی شکل دی جاتی ہے۔

شمالی اترپردیش میں اپنے گاؤں بدھانا میں ‘رام لیلا’ میں اداکاری کی تیاری کرنے والے نواز الدین صدیقی کو اسٹیج پر پرفارمنس سے محض چند لمحے قبل اس اسٹیج ڈرامے میں اداکاری سے روک دیا گیا کیونکہ شیوسینا نے منتظمین سے کہا تھا کہ وہ نہیں چاہتے کہ نواز اس ڈرامے میں حصہ لیں۔

شیو سینا کے رکن مکیش شرما نے ٹائمز آف انڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بدھانا میں گزشتہ 50 سے 60 سال کے دوران ہونے والے رام لیلا ڈرامے میں آج تک کسی مسلمان نے اسٹیج پر قدم نہیں رکھا۔ ہم اب بھی اس کی اجازت نہیں دیں گے کیونکہ یہ روایات کی بات ہے۔

شیو سینا کے رویے پر مایوس نوازلدین صدیقی نے کہا کہ وہ آئندہ سال رام لیلا میں حصہ لینے کیلئے پراعتماد ہیں۔

واضح رہے کہ 1966 میں قائم ہونے والی شیو سینا اپنے قیام سے اب تک ہندوستان میں اقلیتوں خصوصاً مسلمانوں کے خلاف اقدامات میں مصروف رہی ہے اور وقتاً فوقتاً مختلف طریقوں سے انہیں نشانہ بناتی رہی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Skip to toolbar